menu close
    stories
    July 14, 2018

    WELD پروجیکٹ: تربیت کے ذریعے خواتین کا بااختیار بنانا

    اینگرو فوڈز، اینگرو فاؤنڈیشن اور امریکن ایڈ انٹر پرینیوئرزنے، MEDA پاکستان کے تعاون سے WELD پروجیکٹ کے لیے شراکت داری کی جس کے تحت شمالی سندھ اور جنوبی پنجاب کے ایسے علاقوں کو معاشی طورپر ترقی دینے کے مشن کا آغاز کیا جہاں گھریلو سطح پر دودھ کی پیداوار ہوتی ہے، ان علاقوں میں دی وومین ایمپاورمنٹ تھرو لائیو اسٹاک ڈیولپمنٹ (WELD) پروجیکٹ (مویشیوں سے بہتر پیداوار کے ذریعے خواتین کو بااختیار بنانے) کام کررہا ہے۔

    اپنے علاقوں میں مثبت تبدیلی کی علامت بنتے ہوئے خواتین کو بااختیار بنانے والے ویلڈ پروجیکٹ کا مقصد مال مویشیوں کی پیداوارکو بڑھانا ہے اور خواتین انٹرپرینیوئر کے ذریعے دودھ کی کمرشل مارکیٹنگ بڑھاتے ہوئے مویشیوں سے حاصل ہونے والی آمدنی میں اضافہ اور ان کے پالنے اور سنبھالنے کے امور کی تربیت فراہم کرنا ہے۔تازہ ترین سروے کے مطابق، مال مویشیوں کو پالنے اور سنبھالنے کے امور کا 80فیصد کام خواتین انجام دیتی ہیں، جواپنے اوقات کے 5سے 6گھنٹے روزانہ مویشیوں کو سنبھالنے میں لگا دیتی ہیں۔

    اس مقصد کی تکمیل کے لیے دیہی خواتین کو دودھ کی کمرشل مارکیٹنگ، مویشیوں کی بہتر دیکھ بھال اور پیداوار بڑھانے کے بہترین تجربات اور اضافی پیداوار لینے سے متعلق جامع ٹریننگ اور عملی مواقع فراہم کئے گئے۔

    WELD پلیٹ فارم کے ذریعے، جولائی سے دسمبر2013کے دوران،اینگرو نے 122یونین کونسلوں کے 533دیہاتوں میں 18,682ملک پروڈیوسرز کوتربیت فراہم کی۔ اسی مدت کے دوران، ہم نے 250فی میل ولیج ملک کلیکٹرز (FVMC) اور 322فی میل لائیو اسٹاک ایکسٹینشن ورکرز (FLEW) کو منتخب کیااورا نہیں تربیت فراہم کی۔

    WELD پروجیکٹ سے دیہی خواتین کی مویشیوں کو سنبھالنے میں تیکنیکی معلومات بڑھانے سے دودھ کی پیداوار میں واضح اضافہ دیکھنے میں آیا۔ مثلاً ٹریننگ حاصل کرنے والوں میں 65فیصد کا دعویٰ ہے کہ ان کے جانوروں کی پیداوار روزانہ کی بنیاد پر فی جانور 0.98لیٹر بڑھ گئی۔اسی طرح جولائی 2011سے دسمبر2013کے دوران اضافی پیداوار سے حاصل ہونے والی آمدنی 266ملین روپے بنتی ہے۔

    اضافی پیداوار میں مزید بہتری اور معاشی ترقی کے لیے، اینگرو نے دیگر اہم علاقوں کی نشاندہی کی ہے تاکہ کمپنی کی رسائی میں مزید اضافہ ہو۔