menu close
    stories
    July 01, 2018

    اینگرو کا غربت میں کمی لانے کے لیے ورلڈ بینک اور اسٹینڈرڈ چارٹرڈ بینک کے صدور کے ساتھ اشتراک عمل

    اینگرو کارپوریشن ورلڈ بینک، آئی ایم ایف کے سالانہ اجلاس میں ایک قابل قدر پینل کا حصہ تھی جس میں مشترکہ خوشحالی کو پانے اور غربت کے خاتمے کے لیے عالمی ایجنڈا پر تبادلہ خیال ہوا۔اس پینل کی صدارت ورلڈ بینک کے گروپ پریذیڈنٹ، جم کم؛ اسٹینڈرڈ چارٹرڈ کے گروپ سی ای او،پیٹر سینڈز، اوراینگرو کارپوریشن کے صدر،علی انصاری کے ساتھ برطانوی سیکریٹری آف اسٹیٹ، جسٹن گریننگ اور سفیان احمد، منسٹر آف فنانس اور اکنامک ڈیولپمنٹ آف ایتھوپیا کررہے تھے۔پینل میں ”غربت کے خاتمے اور مشترکہ خوشحالی کے لیے معیشت کی تشکیل نو“پر اپنی آراء پیش کرنے کے لیے کہا گیا، اس کے لیے غریب ممالک میں کامیاب معیشت کی تشکیل نو کے لیے ضروری عوامل کا بھی جائزہ لیا گیا۔اس موقع پر علی انصاری نے ملکی ترقی میں نجی شعبے کے کردار،موثر تعلقات کے فوائداور پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر کے درمیان شراکت داری، غربت کے خاتمے کو یقینی بنانے کے لیے قومی ترجیحات اور مجموعی ترقی کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔

    اینگرو قائدانہ کردار اداکرنے والا ادارہ رہا ہے جس نے اپنے اسٹیک ہولڈرز کی ایک وسیع فہرست کے لیے مجموعی قدر کو بڑھانے کی کوششیں جاری رکھی ہوئی ہیں۔اس میں کاروباری فلاح بہبود سے لیکر بزنس کی اجتماعیت کو کاروباری منصوبہ بندی کا لازمی جز سمجھا جاتا ہے۔سالہا سال سے کمپنی اپنے اثرات کا جائزہ لیتی رہی ہے اور اپنے سپلائرز کے ساتھ اپنے وینڈر ز کے لیے صرف ترقی ہی حاصل نہیں کی بلکہ نچلی سطح تک حقیقی اور بامعنی تبدیلی کے لیے کوشاں رہی ہے۔

    اینگرواپنے مختلف بزنسز کے ذریعے 1.5ملین کاشتکاروں اور 250,000ڈیری فارمرز کے ساتھ مصروف عمل ہے جو کمپنی کے فرٹیلائزر اور فوڈ زکے اہم امور انجام کرتے ہیں۔ اینگرو کے زرعی فارمرز کے ساتھ اشتراک عمل کے نتیجے میں کسان کی خالص آمدنی میں 120بلین روپے کا اضافہ ہوا ہے جبکہ فوڈزبزنس نے اپنے قیام سے اب تک دودھ کی پیداوار میں 20فیصد اضافے کے ذریعے ڈیری فارمنگ کمیونٹی میں 40بلین روپے کی رقم تقسیم کی ہے۔اینگرو فاؤنڈیشن نے اپنے فلاحی اور سٹیزن شپ ونگ کے ذریعے،غربت میں خاتمے، اینگرو بزنسز کی میزبانی کرنے والے علاقوں میں مجموعی ترقی کے لیے قومی ترجیحات کے مطابق معاشرتی ترقی کے لیے سرمایہ کاریوں پر توجہ مرکوزرکھی ہوئی ہے۔

    اینگرو کارپوریشن ملک کی مجموعی ترقی میں اپناکردار اداکرنے کے لائق ہے اور اس ضمن میں تھر کول اور ایل این جی امپورٹ ٹرمینل پروجیکٹ جیسے توانائی کے اہم شعبہ جات میں بھرپور کام سرانجام دے رہی ہے۔