menu close
    press releases
    June 17, 2020

    کرونا کے مریضوں کیلئے نشتر ہسپتال میں High Dependency Unit قائم کیا جائے گا۔

    حسین داؤد کی جانب سے عطیہ کئے گئے ایک ارب روپے کی امداد کے تحت نشتر ہسپتال ملتان میں کرونا کے مریضوں خصوصی طو ر پر پسماندہ طبقے کیلئے12ملین روپے کی لاگت سے انتہائی نگہداشت یونٹ(ICU)High Dependency Unit(HDU)قائم کیا جائے گا۔اس منصوبے کے تحت اس امدا د کو 16بستروں پر مشتمل آئی سی یوا۔ایچ ڈی یویونٹ کے قیام اور چلانے کیلئے استعمال کیا جائے گا۔اس منصوبے کو نامور سول سوسائٹی تنظیمStrengthening Participatory Organization (SPO)کے ذریعے نافذ اور مانیٹر کیا جائے گا۔

    داؤد فاؤنڈیشن کی سی ای او سبرینا داؤد کے مطابق Covid-19کی وباء نے سہولیات اور تربیت کے علاوہ ہمارے ملک گیر صحت کے نظام میں فوری بہتری کی ضرورت کو اجاگر کیا ہے۔ اس امداد کے ذریعے ہم نشتر ہسپتال کی صلاحیتوں میں اضافے کا عزم رکھتے ہیں تاکہ مریضوں کی اہم نگہداشت کی جا سکے اور عام عوام کی خدمت کو بہتر طریقے سے انجام دیا جا سکے۔

    اس موقع پر نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا نے کہا کہ نشتر ہسپتال پاکستان کے سب سے قدیم اور معتبر ہسپتال کے طو ر پرپنجاب بھرمیں پسماندہ طبقے کے افراد کو طبی سہولیات فراہم کرتا ہے۔ داؤد فاؤنڈیشن کی جانب سے دی جانے والی اس مالی مدد سے قائم کی جانے والی انتہائی نگہداشت کی سہولت وقت کی اہم ضرورت ہے جس سے قیمتی جانوں کو بچانے میں مدد ملے گی۔

    واضح رہے کہ مریضوں کی انتہائی نگہداشت کے حوالے سے اٹھایا جانے والا یہ قدم اینگرو کے چیئر مین حسین داؤداور داؤد ہرکولیس گروپ وائرس کے خلاف بیماری کی روک تھام، جانچ اور تشخیص،اس وبا کے خلاف جنگ لڑنے والے ڈاکٹرز اور دیگر طبی عملے کی حفاطت، مریضوں کی دیکھ بھال اور ان کی فراہم کی جانے سہولیات کو یقینی بنانا اورمعاشرے کے مستحق افراد تک ضروریاتِ زندگی کی فراہمی کو یقینی بنانے جیسے محاذوں پرتندہی سے کام کررہے ہیں۔