menu close
    press releases
    November 04, 2020

    اینگرو فرٹیلائزرز اور بینک آف پنجاب نے کسانوں کومدد فراہم کرنے کیلئے معاہدے پر دستخط کردیئے معاہدے کے تحت کسانوں کو گوداموں کی رسیدوں پر مالی اعانت فراہم کی جائے گی

    کراچی: پاکستان میں غذائی تحفظ کے چیلنجز سے نمٹنے کیلئے اینگرو فرٹیلائزرز اور بینک آف پنجاب نے آنے والےموسمِ سرما میں ساہیوال اور مرید کے میں مکئی اور باسمتی چاول کی فصل کیلئے کسانوں، تاجروں اور پروسیسروں کو گوداموں کی رسید پر مالی اعانت فراہم کرنے کی غرض سے اشتراک کیا ہے۔

    اس منصوبے کے تحت کسان بین الاقوامی معیار کی سہولیات کے حامل سائلوز اسٹوریج میں اپنی مصنوعات محفوظ کرسکیں گے اور ان میں موجود انونٹری پر کموڈیٹی پر مبنی فنانسنگ حاصل کرسکیں گے جوکہ بینکاری اداروں میں ضمانت کے طورپر کام کرے گا۔

    واضح رہے کہ فصل کی کٹائی کے وقت معیاری اسٹوریج سہولیات کی کمی اور اگلی فصل کی کاشت کیلئے درکار رقم کی وجہ سے کسانوں کواپنی فصل معمولی قیمت پر فروخت کرنی پڑتی ہے جبکہ روائتی طریقوں سے اناج ذخیرہ کرنے سے اجناس کا معیارگرنے اور ان کو انفکیشن کا خطرہ لاحق ہوتاہے جس کی وجہ سے اس کی قدر کم یا مکمل طورپر ختم ہوجاتی ہے۔ جس سے کسان اورملکی ر زرعی شعبہ دونوں کو دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

    کمپنی سے جاری اعلامیئے کے مطابق اس سہولت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے کسان اپنی فصلوں کی پیداوار کو محفوظ طریقے سے ذخیرہ کرکے بہتر وقت میں اچھی قیمت پر فروخت کرسکیں گے جبکہ گودام کی رسید فنانسنگ کا منصوبہ کسانوں کے اخراجات کوپورا کرنے کیلئے نقدرقم فراہم کرے گا جس سے کسانوں کو بہتر معاشی نتائج کے حاصل کرنے کے علاوہ انہیں بااختیار بنائے گا۔

    اینگرو فرٹیلائزرز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر نادر سالار قریشی اور بینک آف پنجاب کے صدر اور چیف ایگزیکٹو آفیسر ظفر مسعود نے اپنے مشترکہ بیان میں کہاکہ اس شراکت داری پر ہمیں بہت خوشی ہے۔ یہ شراکت داری چھوٹے کاشتکاروں میں منظم مالیاتی شمولیت کو فروغ دینے کے ساتھ ساتھ فصلوں کے تیار ہونے کے بعد ہونے والے نقصانات کو نمایاں طورپر کم اور بہتر طریقے سے فصلوں کو ذخیرہ کرکے ملک کے زرعی نقصانات کو کم کرنے میں مدد فراہم کرسکتی ہے۔ زرعی شعبے کی ترقی کیلئے چھوٹے کاشتکاروں کی مالیاتی شمولیت اور فلاح و بہبود کو ترجیح دینا کلیدی اہمیت کا حامل ہے جس سے ملکی ترقی میں مدد ملے گی۔